برتن دھونے سے خواتین ذہنی سکون حاصل کرسکتی ہیں،تحقیق

برتن دھونا اور وہ بھی روزانہ دُنیا کے چند مشکل کاموں میں سے ایک کام ہے جسے خواتین کی ایک بڑی تعداد نا پسند کرتی ہے کیوں کے برتن دھونے میں اُن کا دل نہیں لگتا ۔

گھر کے کام کاج کرنا خواتین کے لیے ہمیشہ سے ایک مسئلہ رہا ہے اور ہر کوئی چاہتا ہے کہ اس بوریت سے بھرپور کام سے چھٹکارا حاصل ہو بالخصوص کچن میں برتن دھونا، امور خانہ داری انجام دینے والی خواتین سے کوئی اس بارے میں پوچھے تو مسائل کی ایک طویل فہرست سننے میں آئے گی لیکن ضرورت ایجاد کی ماں ہے۔

اس آرٹیکل میں امریکہ کے شہر فلوریڈا کی ایک یونیورسٹی کی نئی تحقیق شامل کی جارہی ہے جس کو پڑھ کر آپ جان پائیں گے کے برتن دھونا انسانی صحت کے لیے کس قدر مفید ہے اور برتن دھونے سے کیسے بیماریوں سے بچا جا سکتا ہے۔فلوریڈامیں ہونے والی اس نئی تحقیق کے مطابق برتن دھونے سے دماغ نہ صرف پرسکون رہتا ہے بلکہ ذہنی دباؤ سے نجات بھی حاصل ہوتی ہے۔

اس نئی تحقیق کے مطابق اگر آپ اپنے دماغ کو پر سکون بنانا چاہتے ہیں یا ذہنی دباؤ سے نجات حاصل کرنا چاہتے ہیں تو گھر کے کام کاج کریں بالخصوص کچن میں برتن دھونے سے باالکل بھی گریز نہ کریں بلکہ اس کام کو شوق سے انجام دیں۔برتین دھونے کے دوران آپ کے ہاتھ پانی میں رہتے ہیں اور نل سے گرتا پانی آپ کے ہاتھوں کو قدرتی طور پرایک مساج دیتا ہے جو ذہہن کو پرسکون اور دماغ کو ٹھنڈا رکھنے میں مدد گار ثابت ہوتا ہے۔

جاپانی ماہرین کے مطابق پانی کے مالیکولز کا سٹرکچر انسان کے حواس سے سٹرکچر سے ملتا ہے اور پانی سی موڈ کو بہتر بنایا جاسکتا ہے ، اسی طرح گندہ پانی موڈ کو خراب بھی کرسکتا ہے۔

فلوڑیدا اسٹیٹ یونیورسٹی میں کی جانے والی اس تحقیق سے یہ بات سامنے آئی ہے کہ گھریلو کام کاج خصوصا کچن میں برتن دھونا ذہنی دباؤ سے نجات دلاتا ہے اور دماغ کو پرسکون بناتا ہے۔ تحقیق میں کہا گیا ہے کہ اگر برتن دھونے کے کام کو توجہ کے ساتھ انجام دیا جائے تو یقینی طور پر نہ صرف ذہنی سکون حاصل ہوگا بلکہ زہنی تھکاوٹ اور پریشانیوں سے بھی نجات ممکن ہے۔