یورپی ممالک جہاں پاکستانی مُفت تعلیم حاصل کر سکتے ہیں

اعلی تعلیم کے حصول کے لیے یورپ جانا تقریبا ہر پاکستانی طالبعلم کا خواب ہے مگر اس خواب کی تکمیل کے لیے اُسے یورپی ممالک کی یونیورسٹیز کو بھاری فیسز ادا کرنی پڑتی ہیں اور بھاری فیسز کا بوجھ ہر طالبعلم نہیں اُٹھا سکتا چنانچہ بہت سے طالبعلم اپنے زمانہ طالبعلمی میں اپنے اس خواب کو پورا نہیں کر پاتے۔
ہم نے اس پوسٹ میں اُن 7 یورپی ممالک کو شامل کیا ہے جہاں کالج کی تعلیم بغیر کسی ٹیوشن فیس کے مفت دی جاتی ہے اورسب سے بڑی خوسخبری کی بات یہ ہے کہ یہ ممالک مفت تعلیم کی سہولت اپنے ہاں آنے والے غیر ملکی طالبعلموں کو بھی بغیر کسی تفریق کے دیتے ہیں جس سے ان ممالک کی انسان دوستی اور محبت کھل کر عیاں ہوتی ہے۔

اگر آپ بھی یورپ میں تعلیم حاصل کرنا چاہتے ہیں لیکن بے تحاشہ اخراجات کی وجہ سے اپنے اس خواب کو عملی جامعہ نہیں پہنا سکتے تو ان سات ممالک میں سے اپنی پسند کے کالج یا یونیورسٹی کا انتخاب کریں اور اپنے خواب کو عملی جامعہ پہنائیں۔

1.The Republic of Estonia

نارتھ یورپ میں گلف آف فن لینڈ ، رشیا اور لاطیویا کے بارڈر پر واقع ایسٹونیا یورپ کے اُن ممالک میں شامل ہے جہاں کالچ کی ٹیوشن فیس ایسٹونیا کے ٹیوشن فری پروگرام کے تحت وصول نہیں کی جاتی۔
ایسٹونیا میں یورپی طالبعلموں کے ساتھ باقی دنیا کے طالبعلموں کو بھی یونیورسٹی میں ٹیوشن فری پروگرام کے تحت داخلہ دیا جاتا ہے اس کے علاوہ بہت سے کالج بھی ٹیوشن فری پروگرام کے تحت طالبعلموں کو داخلہ دیتے ہیں، ایسٹونیا میں ڈاکٹریٹ لیول کے تمام طالبعلموں کو مفت تعلیمی سہولیات مہیا کی جاتی ہیں۔
ایسٹونیا میں داخلے کے لیے آپ انٹرنیٹ پر اپنی پسند کی یونیورسٹی کا انتخاب کریں اور یونیورسٹی سے معلومات حاصل کریں اور درخواست کریں کے وہ ٹیوشن فری پروگرام کے تحت آپ کو یونیورسٹی میں داخلہ دے۔

2.The Kingdom Of Denmark

نارتھ یورپ میں واقع ڈینمارک بھی یورپ کے اُن ممالک میں شامل ہے جہاں کالج کی تعلیم مفت دی جاتی ہے لیکن اس سہولت سے EU/EEA اور سویٹزرلینڈ کے طالبعلم فائدہ حاصل کر سکتے ہیں۔
بحثیت پاکستانی آپ کو یونیورسٹی کی فیس ادا کرنی ہو گی لیکن اگر آپ ایکسچینچ سٹوڈنٹ پروگرام کے تحت ڈینمارک کی کسی یونیورسٹی میں داخلہ لیں گے تو آپ بھی بغیر کوئی فیس ادا کئے ڈینمارک میں مفت تعلیمی سہولیات سے فائدہ اُٹھا سکتے ہیں۔

3.The Republic of Finland

فن لینڈ بھی نارتھ یورپ کے اُن ممالک میں شامل ہے جہاں کالج اور یونیورسٹی کی تعلیم EU/EAA کے طالبعلموں کے لیے بلکل مفت ہے لیکن اگر آپ کا تعلق کسی یورپی ملک سے نہیں ہے تو آپ کو فن لینڈ میں کالج اور یونیورسٹی میں داخلہ حاصل کرنے کے لیے مطلوبہ فیس ادا کرنا ہوگی ۔
لیکن اگر آپ فن لینڈ میں پی ایچ ڈی کرنا چاہتے ہیں اور آپ کو اس سلسلے میں فن لینڈ کی کوئی یونیورسٹی ڈاکٹریٹ کا کورس آفر کر دیتی ہے تو پھر آپ کے لیے یہ تعلیم فن لینڈ مفت مہیا کرے گا اور آپ کو کوئی فیس ادا نہیں کرنی پڑے گی چاہے آپ کا تعلق دنیا کے کسی بھی ملک سے ہو۔

4.Norway

ناروے دنیا کے ان چند ممالک میں شامل ہے جہاں کالج اور یونیورسٹی کی تعلیم ناروے کی تمام سٹیٹس میں مفت دی جاتی ہے۔
مفت تعلیم کی یہ سہولت بغیر کسی رنگ و نسل اور نیشنیلٹی کی قید کے ساری دنیا کے طالبعلموں کے لیے ہے لیکن وہ طالبعلم جن کا تعلق یورپ کے کسی ملک سے نہیں ہے اُنہیں ناروے میں تعلیم حاصل کرنے کے لیے 35 سے 72 ڈالر سال میں دو دفعہ یونیورسٹی کو ادا کرنا ہوتے ہیں جو کے بہت ہی معمولی رقم ہے۔
بحثیت پاکستانی طالبعلم اگر آپ ناروے میں کسی کالج یا یونیورسٹی کے کورس میں داخلہ لینا چاہتے ہیں تو آن لائن اپنی پسند کی یونیورسٹی میں اپنے کورس میں داخلہ حاصل کر کے یونیورسٹی سے اپنا ایڈمیشن لیٹر حاصل کریں جس کی بنیاد پر ناروے کی ایمبسی میں انٹرویو کے بعد آپکو ناروے کا سٹڈی ویزا مل سکتا ہے۔

5.Slovakia

سلواکیہ کی زیادہ تر یونیورسٹیز سلواکیا کی گورنمینٹ کی ملکیت ہیں جہاں ساری دنیا کے طالبعلموں کے لیے مفت اور میعاری تعلیم کی سہولیات مہیا کی جاتی ہیں۔
لیکن اگر آپ سلواکیہ میں انٹرنیشنل سٹوڈنت ہے اور آپ کا تعلق یورپی ممالک سے نہیں اور آپ ان کالج یا یونیورسٹیز میں کسی ایسے کورس میں داخلہ لیتے ہیں جس کا دورانیہ لمبا ہے تو آپ کو 1400 یورو سالانہ فیس ادا کر ہو گی۔

6.Republic of Solvenia

ریپبلک آف سولوینیا کی یونیورسٹیز ساری دنیا کے طالبعلموں کو خوش آمدید کہتی ہے اور انہیں اپنے ہاں تعلیم حاصل کرنے کی سہولت مہیا کرتی ہے۔
لیکن یہ سہولت صرف یورپی ممالک کے طالبعلموں اور Serbia, Macedonia, Kosovo, Montenegro, Bosnia, and Herzegovina کے طالبعلموں کے لیے مفت ہے اگر آپ کا تعلق ان ممالک سے نہیں تو آپ کو یونیورسٹی کی پوری فیس ادا کرنا ہو گی یاں پھر مفت تعلیم کے لیے سکالرشپ حاصل کرنا ہوگا۔

7.Turkey

ترکی کا شمار بھی دنیا کے ان ممالک میں ہوتا ہے جہاں تعلیم یاں تو بلکل مفت ہے یاں بہت تھوڑی فیس لی جاتی ہے ، اگر آپ ایک اچھے طالبعلم ہیں اور ترکی میں اپنی یونیورسٹی میں اچھے نمبرز حاصل کر رہے ہیں تو یونیورسٹی آپ کے تعلیمی اخراجات کا بوجھ خود اُٹھاتی ہے چاہے آپ کا تعلق دنیا کے کسی بھی ملک سے کیوں نہ ہو بصورت دیگر آپ کو یونیورسٹی کی فیس جو کے 500 سے لیکر 2000 ڈالر سالانہ ہے ادا کرنا ہو گی۔

ان ممالک کے علاوہ آپ یورپ میں جرمنی، سویڈن ، آسٹریا، یونان  وغیرہ میں بھی کالج اور یونیورسٹی کی مطلوبہ ریکوائرمینٹس کو پورا کرکے اپنے لیے مفت تعلیم کا حصول ممکن بنا سکتے ہیں۔